وہ گاﺅں جس کی آب و ہوا ہی مردانہ کمزوری کے شکار مردوں کا علاج کردیتی ہے، جو بھی شخص جاکر رہنا شروع کرے دنوں میں ہی۔۔۔

دنیا بھر میں کمزوری کے شکار مرد ویاگرا گولی استعمال کرتے ہیں لیکن آئرلینڈ کا وہ گاﺅں جس کے قریب ویاگرا بنانے کی فیکٹری ہے، وہاں کی تو ساری آب و ہوا ہی ویاگرا بن چکی ہے۔

دواساز کمپنی فائزر کی فیکٹری آئرلینڈ کے چھوٹے سے گاﺅں رنگاسکیڈی کے قریب واقع ہے۔ اس گاﺅں کے باسیوں کا کہنا ہے کہ فیکٹری سے اٹھنے والے دھویں کے باعث گاﺅں میں رہنے والے مرد بغیر کوئی گولی کھائے ہی غیر معمولی طاقت حاصل کر لیتے ہیں۔دی ٹیلیگراف سے بات کرتے ہوئے گاﺅں کے ایک شراب خانے میں کام کرنے والی لڑکی ڈیبی اوگریڈی کا کہنا تھا

کہ فیکٹری سے اٹھنے والے دھویں کو سونگھتے ہی کمزور مرد طاقتور ہونے لگتے ہیں۔ ڈیبی کی والدہ سیڈی نے بتایا کہ ان کے گاﺅں میں مردانہ کمزوری کا کوئی تصور نہیں پایا جاتا کیونکہ قریبی فیکٹری سے آنے والا دھواں مردانہ طاقت کا بہترین نسخہ ہے، جو گاﺅں کے مردوں کو مفت دستیاب ہے۔

نرس فیونا ٹومی، جو کہ گزشتہ پانچ سال سے امریکہ میں ملازمت کررہی ہیں، کا تعلق بھی اسی گاﺅں سے ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ مردوں کا تو ذکر ہی کیا اس گاﺅں کے جانور بھی جنسی جوش سے بھرے رہتے ہیں۔

انہوں نے بتایا ”مجھے تو لگتا ہے کہ اس گاﺅں کے پانی میں بھی ویاگرا کے اثرات ہیں۔ یہ فیکٹری گاﺅں کے اتنی قریب واقع ہے جہاں سے دھواں بھی گاﺅں میں آتا ہے اور عین ممکن ہے کہ پانی میں بھی ویاگرا کے اجزاءشامل ہوتے ہوں۔“

اہل علاقہ کا کہنا ہے کہ یہاں فیکٹری 1998ءمیں قائم ہوئی تھی اور اس کے بعد سے یہاں بچوں کی شرح پیدائش میں بھی غیر معمولی اضافہ ہوچکا ہے۔ دوسری جانب کمپنی کا کہنا ہے کہ رنگاسکیڈی گاﺅں کی فضا میں ویاگرا کے اثرات کی موجودگی ایک دلچسپ کہانی سے زیادہ کچھ نہیں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں