تابکاری مواد سے بھرا چین کا یہ بے قابو خلائی سٹیشن زمین پر گرنے والا ہے، کب اور کہاں گرے گا؟ جان کر آپ کی پریشانی کی کوئی انتہا نہ رہے گی

بیجنگ(نیوز ڈیسک) آسمان سے زمین پر نازل ہونے والی تباہی کے مناظر آپ نے فلموں میں ضرور دیکھے ہوں گے لیکن بدقسمتی سے اب حقیقت میں ایک ایسا ہی واقعہ پیش آنے والاہے جس پر ساری دنیا کے سائنسدان سخت پریشانی میں مبتلاءہیں۔ معاملہ کچھ یوں ہے

کہ چین کا ایک بے قابو خلائی سٹیشن تیزی سے زمین کی جانب بڑھ رہا ہے اور آنے والے چند ہی دنوں میں یہ یورپ، امریکہ، آسٹریلیا یا نیوزی لینڈ میں سے کسی بھی جگہ گر سکتا ہے۔

میل آن لائن کے مطابق خلائی سائنس کے ماہرین نے بتایا ہے کہ تیان گونگ ۔ 1 خلائی سٹیشن میں انتہائی زہریلا تابکار کیمیکل مواد موجود ہے جو کرہ ارض پر بڑی تباہی کا سبب بن سکتا ہے۔یہ تباہی کچھ زیادہ دور نہیں رہ گئی کیونکہ 24 مارچ سے لے کر 19 اپریل کے درمیان کسی بھی وقت یہ حادثہ پیش آ سکتا ہے۔

زمین کی جانب گرتے ہوئے ساڑھے آٹھ ٹن وزنی خلائی سٹیشن میں تابکار کیمیکل ’ہائیڈرا زین‘ موجو دہے۔ اس وقت حتمی طور پر یہ بتانا ممکن نہیں کہ یہ خلائی سٹیشن کس جگہ گرے گا تاہم آخری چند گھنٹوں میں سائنسدان واضح طور پر بتاسکیں گے

کہ اس کا رُخ کس ملک کی جانب ہے۔ اب تک کی معلومات کے مطابق یہ بے قابو خلائی سٹیشن امریکہ، شمالی اٹلی، شمالی سپین، شمالی چین، نیوزی لینڈ، مشرقی وسطیٰ، جنوبی افریقہ کے کچھ حصے یا براعظم افریقہ کے جنوبی حصے میں کہیں بھی گر سکتا ہے۔