پاکستان اورملی نغمے

پاکستان ستر سال کا ہوا ، پوری قوم نے مل کر جشن منایا ۔ چھٹی ہونے کی وجہ سےدن گھر پر گذارا تو ٹی وی دیکھنے کا موقع ملا ۔اس وقت حیرت بھی ہوئی اور خوشی بھی جب کیبل سے ملی نغمے دکھانے کا سلسلہ شروع ہوا ۔بچپن اور نوجوانی کی بہت سی یادوں نے آن گھیرا ۔ ایک سے بڑھ کر ایک ملی نغمہ ، روح سرشار ہوئی، دل تھوڑا بوجھل لیکن اس بات نے تھوڑی ہمت بخشی کہ کم سےکم ایک دن توہم ملک سےمحبت کرتے ہیں ۔ کبھی نہ کبھی عشق کے تقاضے پورے کرنے کی توفیق بھی ہم کو ہو ہی جائے گی۔ ویسےان ملی نغموں سےجشن آزادی کا مزہ دوبالا ہوا، ان ٹریکس پر ایک نظر ڈالتےہیں اوراپنےجذبہ آزادی کومزیدطاقت بخشتے ہیں ۔

سب سے پہلےتوآل ٹائم گریٹ دل دل پاکستان ، جان جان پاکستان ، اس سےیہ سبق ملتا ہے کہ پاکستان سب سے پہلے ہے ، دوسرے سارے پیار ، ساری محبتیں اس کے بعدہیں ۔وطن کی محبت سے بڑھ کر کچھ بھی نہیں ، دوسرا ملی نغمہ دل سے میں نے دیکھا پاکستان ، اس سے یہ پتہ چلتا ہے کہ خواب سے حقیقت تک بدلنے میں بہت کچھ داؤ پر لگانا پڑا،ہرقسم کی قربانی دینا پڑی،بزرگوں کی قبروں سےلے کرحرمتوں اورجانوں کی بھی لیکن سب کچھ کھونےکےبعد بھی ایک آزاد وطن کی خوشی نےسارےدکھوں کامداواکردیا، ہرچبھن، ہرتکلیف راحت میں تبدیل ہوئی۔

اسکے بعد باری آتی ہےتیرا پاکستان ہے ، یہ میرا پاکستان ہے ، اس پردل قربان اس پر جان بھی قربان ہے، اس میں ہم وطنوں کے لئےیہ پیغام ہے کہ وطن ہم سب کا ہے ، ہم سب کواسکےمفادات کا خیال رکھنا چاہیئے،اس کی خاطرکسی بھی قربانی سےدریغ نہیں کرناچاہیئے۔

خوشبو بن کرمہک رہا ہےمیرا پاکستان، ایک ایساملی نغمہ ہے جس میں وطن سے محبت کاجذبہ سرچڑھ کر بولتا ہے ، ملک کے لئے دعائیں بھی ہیں اورساتھ اس بات کا اظہار بھی کہ اس سےناطہ جڑنے کے بعد کڑی دھوپ میں ایک سایہ غریب الوطنوں کو میسر آیا۔اس سےاحساس محرومی جاتا رہا اوراپنا وطن ملنے کی خوشی سب پر غالب آئی

یہ دیس ہمارا ہے ، اسے ہم نے سنوارا ہے ، اس کا اک اک ذرہ ہمیں جان سے پیارا ہے ، اس کے ذریعے یہ بات سمجھانے کی کوشش کی گئی ہے کہ ملک سب کا ہے ، اس کے چپے چپےسےمحبت ہمارےلہو میں گردش کرتی ہے ، ہم اسکی خاطر کسی بھی حد تک جانے سےنہیں ہچکچائیں گے۔اس سے بڑھ کرہمارے لئے کچھ بھی نہیں ۔

وطن کی مٹی گواہ رہنا ، گواہ رہنا ، وطن کی خاک کوگواہ بناکراس بات کاعزم کیاجارہا ہےکہ ملکی ترقی کی راہ میں ہرکوئی جان لڑادے گا۔جس شعبےسےبھی کسی کاتعلق ہو،اس میں وہ اس بات کی کوشش کرےگاکہ ملک کےنام اقوام عالم میں سربلندہو۔کوئی بھی اپنےآپ کوکم ترنہ جانے،ہرکسی کی اپنی اہمیت ہے، ہرشخص وطن کاسپاہی ہے۔

سوہنی دھرتی اللہ رکھےقدم قدم آباد ، اس میں یہ دعا کی جاتی ہےکہ دشمنوں کےناپاک عزائم کبھی کامیاب نہ ہوں ، پیارے ملک میں امن و امان کادور دورہ ہو، خوشحالی اور پیار ومحبت کا ماحول ہو، حق دار کو اس کا حق ملے کسی کی زبان پر حرف شکایت نہ آئے، سب دل و جان سےملک کی خدمت کریں۔

جیوے جیوے پاکستان اس میں بھی اس سےملتی جلتی خواہش چھپی ہے کہ چاہے جتتی سازشیں ہوں ، دشمن جتنا پراپیگنڈے کرے ، سارے ہتھکنڈے آزمالے ،اس کوسوائے ذلت کےکچھ بھی نہ ملےگا ،سبزہلالی پرچم یوں ہی سربلند رہےگا ۔یہ وطن تمہارا ہے،تم ہوپاسباں اس کےاس میں یہ بتایا گیاہےکہ ملک توہم نے حاصل کرلیا ،اب اس کو ترقی کےراستے پرلانےکاکیاطریقہ ہے۔لاکھوں جانوں، ہزاروں عصمتوں کی قربانیاں رائیگاں نہیں جانی چاہیئیں۔ اس وطن کی اہمیت سمجھو، دنیا میں اس کا مثبت امیج ،اسکی پہچان بناناہم سب کافرض ہے۔

،نئےدنوں کی مسافتوں کواجالناہے،اس میں اس بات پر زور دیا گیا ہے کہ بے شمار چیلنجز ملک کو درپیش ہیں ، نگاہیں چرانے سےکام نہیں بنےگا،مشکلات،مصائب کے سامنےسینہ سپرہونااورہواؤں کےرخ کوموڑ دینےسےہی دنیا میں عزم اور نام بنتا ہے۔

اسی طرح کے بے شمار ملی نغمے ہیں جن میں ایک سے بڑھ کر ایک دعا ، خواہش اور پیغام پنہاں ہے جن پر عمل کرکے ہم پاکستان کو عالمی برادری میں ایک ایسا مقام دلاسکتے ہیں جس کو دیکھ کر دشمن صرف ہاتھ ملتا رہ جائےگا، ان ملی نغموں سے نوجوان نسل کو بھی آگاہ کیاجانا بے حد ضروری ہےتاکہ وہ یہ جان سکیں کہ آزادی ہم کوپلیٹ میں رکھ کرپیش نہیں کی گئی، اسکےلئےآگ اورخون کا سمندرپوری قوم کوعبور کرنا پڑا ہے