’’ان 40 افراد کو منظرعام پر لایا جائے جو ۔ ۔ ۔‘‘ نوازشریف نے ایسا مطالبہ کردیا کہ واجد ضٰیاتو کیا ہرپاکستانی حیران رہ جائے گا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) سابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ جے آئی ٹی کے 40 نامعلوم اہلکاروں کو سامنے لایا جائے اور واجد ضیا جے آئی ٹی کے سربراہ ہیں ملک و قوم کے مالک نہیں۔

سابق وزیراعظم نواز شریف نے احتساب عدالت اسلام آباد کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ نیب مقدمہ میں بدعنوانی آج تک کسی کو نظر نہیں آئی، لیکن پوری قوم کو ناانصافی ضرور نظر آرہی ہے، ہر روز نئے راز افشا اور پول کھل رہے ہیں، فراڈ مقدمے میں نئے حقائق سامنے آرہے ہیں، کل احتساب عدالت میں نیا انکشاف ہوا کہ جے آئی ٹی کی رپورٹ بنانے والے 40 افراد کو کوئی نہیں جانتا اور ان کے نام خفیہ رکھے گئے ہیں۔

نواز شریف نے کہا کہ جے آئی ٹی کے 30 تفتیش کنندگان اور عملے کے 10 افراد یہ کون سے نامعلوم افراد تھے جنہوں نے جے آئی ٹی کی تفتیش میں مدد کی ہے، کس محکمے سے آئے تھے، انہیں یہ کردار کیوں سونپا گیا، انہوں نے پس پردہ رہ کر کیس تیار کیا، نہ کسی نے ان افراد کی منظوری دی اور نہ ہی وہ منظر عام پر آئے، یہ کون سے بے نام لوگ تھے جنہوں نے نیب مقدمے میں کردار ادا کیا، سوچنا چاہیے کہ ملک کی قسمت کا کون فیصلہ کررہا ہے، یہ تکلیف دہ کہانی ہے جس کی کھوج لگانی چاہیے، واجد ضیا سے ان 40 افراد کے نام پوچھے گئے تو انہوں نے بتانے سے انکار کردیا، لیکن واجد ضیا جے آئی ٹی کے سربراہ ہیں ملک و قوم کے مالک نہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں