ایسی سستی ترین چیز جس سے کیڑے لگے دانت کو دوبارہ صحت مند بنایا جا سکتا ہے، جدید تحقیق میں ایسا انکشاف کہ نئے دانت لگوانے کی ضرورت نہیں رہے گی

کے ساتھ ساتھ جسم کے پورے اعضاء کی حفاظت کرنا چاہیے، اکثر چھوٹی چھوٹی بد احتیاطیوں کی بدولت ہمارے دانت گرنا شروع ہو جاتے ہیں اور دانتوں کو کیڑا بھی لگ جاتا ہے،

ایک بار کسی دانت میں سڑن شروع ہو جائے تو اسے بچانا مشکل ہو جاتا ہے ایسا دانت کھوکھلا ہو جاتا ہے اس دانت کی فلنگ کروانے کے باوجود ہمیں اس دانت سے محروم ہو جانا پڑتا ہے مگر اب سائنسدانوں نے دانت کی اس بیماری کا نہایت آسان اور سستا علاج دریافت کر لیا ہے جو عام آدمی کی دسترس میں ہے مگر کوئی اس کے متعلق جانتا ہی نہیں تھا۔ میل آن لائن نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ برطانوی سائنسدانوں نے نئی تحقیق میں بتایا ہے کہ عام پائی جانے والی گولی اسپرین دانتوں کو نہ صرف سڑنے سے محفوظ رکھتی ہے بلکہ کھوکھلے ہو جانے والے دانتوں کو بھی دوبارہ صحت مند کرنے کی صلاحیت سے مالا مال ہے۔ بیلفاسٹ کی کوئنز یونیورسٹی کے سائنسدانوں نے یہ تحقیق کی ہے۔ تحقیق کرنے والی ٹیم کے سربراہ ڈاکٹر ایل کریم نے بتایا کہ اسپرین ان منرلز کی تعمیر نو کا کام کرتی ہے جو دانتوں کو مضبوط بناتے ہیں، یہ دانتوں کی جڑوں کو بھی کھوکھلے ہو چکے دانت کے سٹرکچر کو قدرتی طورپر دوبارہ بھرنے یا تعمیر کرنے کی طاقت بھی دیتی ہے، انہوں نے کہا کہ دنیا میں کروڑوں لوگوں کے دانت کھوکھلے ہوتے ہیں اور وہ انہیں دندان سازوں سے بھروانے پر مجبور ہو جاتے ہیں، انہوں نے کہا کہ ہماری اس تحقیق کے نتیجے میں اب لوگوں کو دانت بھروانے کی ضرورت نہیں رہے گی، اس کے علاوہ سائنسدانوں نے اپنی رپورٹ میں کہا کہ انگوروں میں بھی ایک ایسا قدرتی عنصر پایا جاتا ہے جو دانتوں کو مضبوط بنانے میں کارساز ہے اور انہیں سڑنے اور کھوکھلا ہونے سے بچاتا ہے۔