یہ دنیا آخر ہے کیا؟

اسلام آباد (قدرت روزنامہ) مسٹر اللہ دتہ اپنے سیکرٹری کو کہتا ہے ، آنے والے ہفتے کے دن میں کراچی جا رہا ہوں ، تم میرے ساتھ چلو گی دو دن کا ٹرپ ہے.سیکریٹری اپنے شوہر کو بتاتی ہے کہہفتہ اتوار میں گھر پر نہیں ہوں ، تم کھانے پینے کا انتظام خود ہی کر لینا.
اسکا شوہر اپنی ایک

دوست کو فون کرتا ہے کہ ہفتے کی رات کو گھر پر آ جانا مل کر کھائیں پکائیں گے.شوہر کی وہ دوست کسی بچے کوٹویشن پڑھاتی تھی اس نے بچے کو فون کیا کہ اس ویک اینڈ پر میں نہیں آ سکوں گی اس لئے ٹویشن سے ‘‘ چھٹی’’ !!.وہ بچہ خوش ہو کر اپنے دادے اللہ دتے کو فون کرتا ہے.دادو ، اس ویک اینڈ پر میں اپ کے ساتھ آ سکتا ہوں ،اللہ دتہ خوش ہو کر اپنی سیکرٹری کو فون کرتا ہے ، بزنس ٹور کینسل !.

سیکرٹری اپنے شوہر کو فون کرتی ہے ، بزنس ٹور کینسل. شوہر اپنی دوست کو فون کرتا ہے ، ویک اینڈ کا کھانا پینا کینسل. شوہر کی دوست بچے کو فون کرتی ہے……….. یعنی کہ دنیا گول ہی نہیں گول مگول ہے