قیامت کی نشانی جو کہ پوری ہو چکی ہے

اللہ رب العزت کفار کو قرآن میں‌مخاطب ہے کہ اس دن سے ڈرو جس کا خوف بچوں کو بوڑھا کر دے گی . اس آیت کا مصداق قیامت کا دن ہوگا جو اتنا خوفناک ہوگا کہ انسان کو کسی بات کا ہوش نہیں‌رہے گا .، حاملہ عورتوں‌کا حمل گر جائے گا. اور بچے اس دن کے غم سے بوڑھے ہو جائے گے . زمین پر سب کچ ختم ہو جائے سب کچھ تہس نہس ہو جائےگا اور صرف اللہ کی ذات باقی رہے گی . لیکن کچھ لوگوں نے جو کہ قرآن و سنت کے علوم سے بے

بلد ہے ان کے مطابق کسی بچے کا بوڑھا ہوجانا چاہئے قیامت سے پہلے ہی کیوں‌نہ ہو یہ بھی ایک قیامت کی نشانی ہے . حال ہی میں انڈیا کے اندر ایک بچہ پید اہوا . جو کہ دیکھنے میں‌عام بچوں کی طرح تھا . لیکن جیسے جیسے اس کی عمر گزرتی گئی ، اس

کی جلد بوڑھوں کی طرح ہوتی گئی اور تین سال کی عمر میں‌وہ بالکل ایسا لگ رہا تھا جیسے 120 سال کا بڈھا ہو . اس کے اعضاء ڈھیلے پڑھ گئے تھے اور اسے بھی بوڑھوں کی طرح جوڑوں کا درد شروع ہوگیا تھا . اور اس کے علاوہ اور بھی کافی بچے پیدا ہوئے جو کہ کافی کمزور اور بوڑھوں کی طرح تھے . تو قارئین ایسی کوئی آپ کو نشانی بتائے تو اسے آپ سمجھا سکتے ہیں کہ اس آیت کا تعلق قیامت سے ہے . قیامت کی ایک نشانی یہ بھی ہے جس کا ذکر حضرت ابو ھریرۃ رضی اللہ نے اپنی روایت میں‌کیا ہے . قیامت تب تک قائم نہیں ہوگی جب تک

مسلمان یہودیوں کے ساتھ قتال نہ کریں . مسلمان یہودیوں کو قتل کریں‌اور جب کسی درخت یا پتھر کے پیچھے چھپے گے تو وہ چیز خود بول پڑے گی . سوائے ایک درخت کے جس کانام غرقد ہوگا . یہ درخت یہودیوں کو پناہ دے گا . اس درخت کی اونچائی 4 سے 6 فٹ کے درمیان ہوتی ہے یہ درخت یہودی کمیونٹی پوری دنیا میں‌لگا رہی ہے اور اس کی کاشت کردہ تعداد 3 کروڑ سے زیادہ ہے. اور یہ درخت ان کا قومی درخت سمجھا جاتا ہے .’’انس رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: قیامت کی نشانیوں میں سے یہ ہے کہ علم اٹھا لیا جائے گا، جہالت بڑھ جائے گی، شراب پی جائے گی اور زنا عام ہو جائے گا۔‘‘

’’عبداللہ بن عمر رضی اللہ عنھما سے روایت ہے کہ ۔۔۔ میرے والد عمر بن خطاب رضی اللہ عنہ نے مجھ سے بیان کیا کہ ایک دن جب کہ ہم نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس بیٹھے ہوئے تھے،تو اسی دوران میں اچانک ایک بہت سفید کپڑوں اور انتہائی سیاہ بالوں والا آدمی نمودار ہوا۔۔۔۔ اس نے (نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے) پوچھا ، مجھے قیامت کے بارے میں بتائیے (وہ کب آئے گی)؟ آپ نے فرمایا: جس سے پوچھا جا رہا ہے وہ اس کے بارے میں پوچھنے والے سے زیادہ نہیں جانتا۔اُس نے کہا، تو آپ مجھے اُس کی کچھ نشانیاں ہی بتا دیجیے ۔ آپ نے فرمایا: ایک نشانی یہ ہے کہ لونڈی اپنی مالکہ کو جن دے گی اور دوسری یہ ہے کہ تم (عرب کے) اِن ننگے پاؤں، ننگے بدن پھرنے والے (بکریوں کے) اِن کنگال چرواہوں کو بڑی بڑی عمارتیں بنانے میں ایک دوسرے سے مقابلہ کرتے دیکھو گے۔۔۔ ۔‘‘

حضرت ابوہریرہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ سے روایت ہے کہ اس شخص (حضرت جبرائیل علیہ السلام) نے کہا کہ قیامت کب ہوگی؟ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ جس سے یہ بات پوچھی جارہی ہے سائل سے زیادہ نہیں جانتا (بلکہ ناواقفی میں دونوں برابر ہیں) اور میں تم کو اس کی علامتیں بتائے دیتا ہوں، جب لونڈی اپنے سردار کو جنے اور جب سیاہ اونٹوں کو چرانے والے عمارتوں میں رہنے لگیں (تو سمجھ لینا کہ قیامت قریب ہے)
اگر بغور دیکھا جائےاتو ہمیں‌اس بات کا احساس ہوگا کہ یہ تمام نشانیاں پوری ہوچکی ہے او ر قیامت بہت قریب آگئی ہے اس لئے اپنے ایمان کی فکر کریں اس سے پہلے کے توبہ کا دروازہ بند ہو جائے